1,171

خودی نہ بیچ غریبی میں نام پیدا کر

دیار عشق میں اپنا مقام پیدا کر
نیا زمانہ نئے صبح و شام پیدا کر

خدا اگر دل فطرت شناس دے تجھ کو
سکوت لالہ و گل سے کلام پیدا کر

اٹھا نہ شیشہ گران فرنگ کے احساں
سفال ہند سے مینا و جام پیدا کر

میں شاخ تاک ہوں میری غزل ہے میرا ثمر
مرے ثمر سے مے لالہ فام پیدا کر

مرا طریق امیری نہیں فقیری ہے
خودی نہ بیچ غریبی میں نام پیدا کر

علامہ محمد اقبال

Mera Tareek Ameeri Nahin Faqeeri Hai
Khudi Na Baich Ghareebi Mein Naam Paida Kar
Allama Muhammad Iqbaal

اس پوسٹ پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں