2,591

کوئی مرتا ہے مر جائے کسے اب فرق پڑتا ہے


سنا ہے سال بدلا ہے سبھی دن رات بدلے ہیں
مگر ہندسہ بدلنے سے کہاں حالات بدلے ہیں

شکوہِ حالات

وہی ظالم مسلط ہیں مرے لوگوں پہ اب تک تو
کوئی چہرہ نہیں بدلا فقط صدمات بدلے ہیں

کوئی مرتا ہے مر جائے کسے اب فرق پڑتا ہے
نہ میرے شہر بدلے ہیں نہ ہی دیہات بدلے ہیں

ہیں میٹھے بول ہونٹوں پر مگر نفرت بھرا دل ہے
نہیں بدلا کبھی دل کو فقط نغمات بدلے ہیں

ہزاروں لوگ مرتے ہیں ہزاروں گھر اجڑتے ہیں
وطن کو لوٹنے والے نہیں حرکات بدلے ہیں

Suna Hay Saal Badla Hay Sbhi Din Raat Bdlay Hen
Magr Hindsa Bdlnay Say Kahan Halaat Bdlay Hen


اس پوسٹ پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں