614

تعریف رب کی جس نے ، سارا جہاں بنایا​


کعبہ

تعریف رب کی جس نے ، سارا جہاں بنایا​
ہر شے کو حسن دے کر ، پیارا سماں بنایا

مخلوق ساری اپنی ، قدرت سے ہے بنائی​
کیسی زمیں بچھائی ، کیا آسماں بنایا​

رسوائی ہو کہ عزت ، غم یا خوشی کی حالت​
اللہ نے ہی سارا ، سود و زیاں بنایا

شب روز کو کیا ہے ، اک دوسرے میں داخل​
شمسی نظام سارا ، گردش کناں بنایا​

عرصہ ہوا بشر کا ، کچھ ذکر ہی نہیں تھا​
خالق نے پھر ہمارا ، نام و نشاں بنایا​

طائر فضا میں سارے ، ہیں حکمِ رب سے قائم​
ان کا ٹھکانہ رب نے ، ہے آشیاں بنایا

بچوں کو بھولپن اور عورت کو نازکی دی​
بوڑھوں کو دی ذہانت ، مردِ جواں بنایا

دریا کو جوش بخشا ، گہرائی بحر کو دی​
وہ بےسکوں بنایا ، یہ بےکراں بنایا

خاروں کو گل نوازے ، بحروں کو موتی بخشے​
لب کو دیا تکلم ، دل بے زباں بنایا

سرشار ہے اسامہ ، رب کی صفات میں گم​
اس کو خدا نے اپنا ، ہے مدح خواں بنایا​
شاعر۔۔۔ محمد اسامہؔ سَرسَری

,TAREEF RAB KI JIS NE
SARA JAHAN BANAYA


اس پوسٹ پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں