9,192

میری اوقات، سب مٹی


نہ پوچھو ذات، سب مٹی میری اوقات، سب مٹی

جتا کر دے بھی دی تو کیا تری سوغات، سب مٹی

دکھاوا آ گیا دل میں جو کی خیرات ، سب مٹی

مزہ ہے شے کی قلت میں ہوئی بہتات، سب مٹی

مری دھرتی جو بنجر تھی تو پھر برسات، سب مٹی

میں جاگوں سو نہیں پاتا کہاں کی رات، سب مٹی

نہیں جب کام کا تیرے​ تو ماری لات، سب مٹی

عدو کا خوف طاری ہو تو کیا جزبات، سب مٹی​

بُھلا دو گے جو تُم اظہر مری خدمات، سب مٹی

محمد اظہر نذیر

Na Pucho Zaat, Sabb Matti
Meri Okaat, Sabb Matti


اس پوسٹ پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں