1,214

اے خدا تو نے سنبھال رکھا ہے

خاک مجھ میں کمال رکھا ہے
اے خدا تو نے سنبھال رکھا ہے

میرے عیبوں پہ ڈال کے پردہ
مجھے اچھوں میں ڈال رکھا ہے

اپنے دامن سے کر کے وابستہ
ہر مصیبت کو ٹال رکھا ہے

میں تو کب کا مٹ گیا ہوتا
تیری رحمت نے پال رکھا ہے

اے خدا تو نے سنبھال رکھا ہے

Khaak Mujh Mein Kamaal Rakha Hai
Aay Khuda Tu Nay Sambhaal Rakha Hai
Mere Aaiboon Pay Daal Kay Pardah
Mujh Ko Achoon Mein Daal Rakha Hai

اس پوسٹ پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اے خدا تو نے سنبھال رکھا ہے” ایک تبصرہ

اپنا تبصرہ بھیجیں