1,088

آج ہر شخص مر گیا ہوگا


آدمی وقت پر گیا ہوگا
وقت پہلے گزر گیا ہوگا

خود سے مایوس ہو کر بیٹھا ہوں
آج ہر شخص مر گیا ہوگا

شام تیرے دیار میں آخر
کوئی تو اپنے گھر گیا ہوگا

مرہمِ ہجر تھا عجب اکسیر
اب تو ہر زخم بھر گیا ہوگا

(جون ایلیا)

Aadmi Waqt Par Gaya Hoga
Waqt Pehle Guzar Gaya Hoga


اس پوسٹ پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں