1,165

تجھے استاد میں مانوں گا


اے مصوّر
تجھے استاد میں مانوں گا
درد بھی کھینچ
میری تصویر کے ساتھ

کسی نے خوب کہا ہے کہ:
حرف تسّلی تو بس اک تکلف ہے
جس کا درد، اسی کا درد، باقی سب تماشائی

محسنؔ بھوپالی کی غزل:

جس کا درد بٹاؤ گے
اس سے رنج اٹھاؤ گے

سب کو دوست بناؤ گے
سب کو دشمن پاؤ گے

دیوانے کو مت سمجھاؤ!
دیوانے کہلاؤ گے

دور نہ جاؤ نظروں سے
دنیا میں کھو جاؤ گے

محفل محفل چھپتے ہو
خلوت خلوت پاؤ گے

تن آسانی کہتی ہے
مشکل میں پڑ جاؤ گے

محسنؔ جو سمجھاتے ہو
خود کو بھی سمجھاؤ گے

!Aay Musawar
Tujhay Ustaad Mein Manoon Ga
Dard Bhi Khainch
Meri Tasweer Kay Sath


اس پوسٹ پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں