1,018

اب کے سال کچھ ایسا کرنا


اب کے سال کچھ ایسا کرنا

شکوہِ حالات

اپنے پچھلے بارہ ماہ کے
دکھ سکھ کا اندازہ کرنا
بسری یادیں تازہ کرنا۔۔

سادہ سا اک کاغذ لے کر
پھر اس بیتے اک اک پل کا
اپنے گزرے اک اک کل کا
اک اک موڑ احاطہ کرنا

سارے دوست اکٹھے کرنا
ساری صبحیں حاضر رکھنا
ساری شامیں پاس بلانا۔۔

اور علاوہ ان کے دیکھو
سارے موسم دھیان میں رکھنا
اک اک یاد گمان میں رکھنا
پھر محتاط قیاس لگانا

گر تو خوشیاں بڑھ جاتی ہیں
تو پھر تم کو میری طرف سے
آنے والا سال مبارک۔۔!!!

اور اگر غم بڑھ جائیں تو
مت بیکار تکلف کرنا۔۔
دیکھو پھر تم ایسا کرنا۔۔!
میری ساری خوشیاں تم لے لینا
مجھ کو اپنے غم دے دینا۔۔۔
اب کے سال کچھ ایسا کرنا۔۔!!

AB K SAAL KUCH ESA KERNA


اس پوسٹ پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں