2,844

مفلسی کی داستان


مفلس کی آدھی بات فضا میں بکھر گئی
صاحب نے جلد کار کا شیشہ چڑھا لیا

مفلسی امتحان لوگوں کا
سوچکا ہے ایمان لوگوں کا

راہ بھٹکے ہوۓ جو پھرتے ہیں
کیا کروں ان جوان لوگوں کا؟

ایک عورت کی بےبسی دیکھی
حال دیکھا شیطان لوگوں کا

ننھی بچی کی خواہشوں کے لیے
منتظر ہے دھیان لوگوں کا

ہاتھ پھیلاۓ نہیں جا سکتے
قصہ ہے بے زبان لوگوں کا

اتنی سردی میں سڑک پر ساحل
نہیں جاتا دھیان لوگوں کا

———————

Muflis Ki Aadhi Baat Fiza Mein Bikhar Gai
Sahib Ne Jald Car Ka Sheesha Charha Lia


اس پوسٹ پر اپنی رائے کا اظہار کریں

مفلسی کی داستان” ایک تبصرہ

اپنا تبصرہ بھیجیں