861

ویلنٹائن ڈے اور قبر کے پھول

14 فروری کو پھول دیتے وقت
قبر کے پھول ضرور یاد رکھیں
انشاءاللہ بہت افاقہ ہو گا

ویلنٹائن ڈے کی تاریخ کچھ یوں ہے کہ اس کا آغاز رومن سینٹ ویلنٹائن کی مناسبت سے ہوا کہ جس کو مذہب تبدیل نہ کرنے کی وجہ سے قید و بند کی صعوبتوں میں رکھا گیا قید کے دوران ویلنٹائن کو جیلر کی بیٹی سے محبت ہو گئی اور اس کو پھانسی پر چڑھانے سے پہلے اس نے جیلر کی بیٹی کو الودعی دعوت نامہ لکھا جس پر دستخط سے پہلے لکھا تھا ‘‘تمھارا ویلنٹائن ’’ کہ واقعہ14فروری 279عیسوی کو پیش آیا اس کی یاد میں اس دن کو منایا جاتا ہے ۔

ویلنٹائن ڈے اور قبر کے پھول

ایک اسلامی معاشرے میں اس طرح کے تہواروں کو پروان چڑھانا اسلامی معاشرے کی تباہی و بربادی پھیلانے کے علاوہ کچھ بھی نہیں ۔ ہمیں اس کے بارے میں بہت گہرائی سے سوچنے کی ضرورت ہے کہ ہمیں اپنی اسلامی اقدار کو محفوظ کرنا چاہیے اور ان پر عمل کرکے ایک اچھا مسلمان بن کر دکھانا چاہیے ۔ ہمیں اس بات کو بھی سوچنا چاہیے کہ ہمارے اسلامی تہواروں کو ختم کیا جا رہا ہے کیا کسی غیر مسلم نے عید کا تہوار منایا ؟ اس کا جواب یقینا نہیں ہی ہو گا۔ تو پھر اسی طرح ہمیں بھی چاہیے کہ غیر مسلموں کی اس سازش کو ناکام بنا کر اسلام کی اقدار کو اپنائیں ۔

یہ سب کچھ ایک سوچی سمجھی سازش کے تحت ہو رہا ہے اور اس کی تشہیر میں پرنٹ میڈیا اور الیکڑونک میڈیا کو پھرپور ہتھیار کے طور پر استعمال کیا جا رہا ہے ۔ اور اس دن کو خاص پروگرام دکھا کر یہ باور کرانے کی کوشش کی جارہی ہے جیسے کہ یہ غیر مضرت رساں یامسلمانوں ہی کا کوئی تہوار ہے ۔

14 February ko Phool Dete Waqt
Qabar ke Phool Zaroor Yaad Rakhein
In sha Allah Bohat Afaqa Ho Ga

اس پوسٹ پر اپنی رائے کا اظہار کریں

ویلنٹائن ڈے اور قبر کے پھول” ایک تبصرہ

اپنا تبصرہ بھیجیں