838

حسرت پہ اس مسافر بے کس کی روئیے

حسرت پہ اس مسافر بے کس کی روئیے
جو تھک گیا ہو بیٹھ کے منزل کے سامنے

مصحفی غلام ہمدانی

حسرت پہ اس مسافر بے کس کی روئیے

Hasrat Pay Is Musafir-e-Bekass Ki Roiey
Jo Thak Gaya Ho Baith kay Manzil Kay Samnay

اس پوسٹ پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں