868

اردو زبان کی خوشبو – بشیر بدر

وہ عطردان سا لہجہ میرے بزرگوں کا
رچی بسی ہوئی اردو زبان کی خوشبو

اردو زبان کی خوشبو

چمک رہی ھے پروں میں اڑان کی خوشبو
بلا رہی ھے بہت آسمان کی خوشبو

بھٹک رہی ھے پرانی دلائیاں اوڑھے
حویلیوں میں مرے خاندان کی خوشبو

وہ عطردان سا لہجہ مرے بزرگوں کا
رچی بسی ہوئی اردو زبان کی خوشبو

عمارتوں کی بلندی پہ کوئی موسم کیا
کہاں سے آگئی کچے مکان کی خوشبو

گلوں پہ لکھتی ھوئی لا الہ الا للہ
پہاڑیوں سے اترتی اذان کی خوشبو

بشیر بدر

Wo Itardaan Sa Lehja Mere Buzurgoon Ka
Rachi Basi Hui Urdu Zubaan Ki Khushbu

اس پوسٹ پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں